القرآن
اللہ کی یہ کتنی بڑی نعمت ہے کہ (اے پیغمبر آپ ان کے حق میں نرم مزاج واقع ہوئے ہیں ۔ اگر آپ (خدانخواستہ) تند مزاج اور سنگ دل ہوتے تو یہ سب لوگ آپ کے پاس سے تتر بتر ہوجاتے۔ لہذا ان سے درگزر کیجئے، ان کے لیے بخشش طلب کیجئے [١٥٣] اور (دین کے) کام میں ان سے مشورہ کیا کیجئے۔ پھر جب آپ (کسی رائے کا) پختہ ارادہ کرلیں تو اللہ پر بھروسہ [١٥٤] کیجئے۔ (اور کام شروع کردیجئے) بلاشبہ اللہ تعالیٰ بھروسہ کرنے والوں کو پسند فرماتا ہے۔اگر اللہ تمہاری مدد کرے تو تم پر کوئی غالب [١٥٥] نہیں آسکتا۔ اور اگر وہ تمہیں بے یارو [١٥٦] مدد گار چھوڑ دے تو پھر اس کے بعد کون ہے جو تمہاری مدد کرسکے؟ لہذا مومنوں کو اللہ ہی پر بھروسہ کرنا چاہیئے۔یہ نبی کے شایانِ شان نہیں[١٥٧] کہ وہ خیانت کرے۔ اور جو شخص خیانت کرے گا وہ قیامت کے [١٥٧۔١] دن اسی خیانت کردہ چیز سمیت حاضر ہوجائے گا۔ پھر ہر شخص کو اس کی کمائی کا پورا پورا بدلہ دیا جائے گا اور ان پر کچھ ظلم نہ ہوگا۔بھلا جو شخص اللہ کی رضا کے پیچھے چل رہا ہو وہ اس شخص جیسا ہوسکتا ہے جو اللہ کے غضب میں گرفتار [١٥٨] ہو اور اس کا ٹھکانا جہنم ہو؟ اور جہنم تو بہت برُی بازگشت ہے۔اللہ کے ہاں سب لوگوں کے مختلف درجات ہیں اور جو کچھ وہ عمل کرتے ہیں اللہ انہیں خوب دیکھ رہا ہے
حدیث
سنن ابن ماجہ:جلد سوم:حدیث نمبر 853 حدیث مرفوع مکررات 2 متفق علیہ 0 محمد بن ابی عمر عدنی، عبداللہ بن معاذ، معمر، عاصم ابن ابی نجود، ابی وائل، حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ میں ایک سفر میں نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ہمراہ تھے ایک روز میں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے قریب ہوا ہم چل رہے تھے میں نے عرض کیا اے اللہ کے رسول مجھے ایسا عمل بتا دیجئے جو مجھے جنت میں داخل کرا دے اور دوزخ سے دور کر دے۔ فرمایا تم نے بہت عظیم اور اہم بات پوچھی ہے اور جس کے لئے اللہ آسان فرما دیں یہ اس کے لئے بہت آسان بھی ہے تم اللہ کی عبادت کرو اور اس کے ساتھ کسی قسم کا شرک نہ کرو نماز کا اہتمام کرو زکوة ادا کرو اور بیت اللہ کا حج کرو پھر فرمایا میں تمہیں بھلائی کے دروازے نہ بتاؤں؟ روزہ ڈھال ہے اور صدقہ خطاؤں (کی آگ) کو ایسے بجھا دیتا ہے جیسے پانی آگ کو بجھا دیتا ہے اور درمیان شب کی نماز (بہت بڑی نیکی ہے) پھر یہ آیت تلاوت فرمائی۔ تتجافی جنوبھم عن المضاجع سے جزاء بماکانوا یعملون تک۔ پھر فرمایا سب باتوں کی اصل اور سب سے اہم اور سب سے بلند کام نہ بتاؤں؟ وہ (اللہ کے حکم کو بلند کرنے اور کفر کا زور توڑنے کیلئے) کافروں سے لڑنا ہے پھر فرمایا میں تمہیں ان سب کاموں کی بنیاد نہ بتاؤں میں نے عرض کیا ضرور بتلائیے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنی زبان پکڑ کر فرمایا اس کو روک رکھو میں نے عرض کیا اے اللہ کے نبی جو گفتگو ہم کرتے ہیں اس پر بھی کیا مواخذہ ہوگا؟ فرمایا اے معاذ لوگوں کو اوندھے منہ دوزخ میں گرانے کا باعث صرف ان کی زبان کی کھیتیاں (گفتگو) ہی تو ہوگی۔ سنن ابن ماجہ:جلد سوم:حدیث نمبر 869 حدیث مرفوع مکررات 0 متفق علیہ 0 حرملہ بن یحییٰ، عبداللہ بن وہب، ابن لہیعہ، عیسیٰ بن عبدالرحمن، زید بن اسلم، سیدنا عمر بن خطاب رضی اللہ تعالیٰ عنہ ایک روز مسجد نبوی کی طرف تشریف لائے تو دیکھا کہ حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ تعالیٰ عنہ نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی قبر مبارک کے پاس بیٹھے رو رہے ہیں فرمایا کیوں رو رہے ہو؟ میں نے ایک بات رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے سنی تھی اس کی وجہ سے رو رہا ہوں۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ تھوڑی سی ریاکاری بھی شرک ہے اور جو اللہ کے کسی ولی (متبع شریعت عامل بالسنة) سے دشمنی کرے اس نے اللہ کو جنگ میں مقابلہ کے لئے پکارا۔ اللہ تعالیٰ پسند فرماتے ہیں ایسے لوگوں کو جو نیک و فرماں بردار ہیں متقی و پرہیزگار ہیں اور گمنام و پوشیدہ رہتے ہیں کہ اگر غائب ہوں تو ان کی تلاش نہ کی جائے حاضر ہوں تو آؤ بھگت نہ کی جائے (ان کو بلایا نہ جائے) اور پہچانے نہ جائیں (کہ فلاں صاحب ہیں) ان کے دل ہدایت کے چراغ ہیں وہ ہر تاریک فتنہ سے صاف بے غبار نکل جائیں گے۔

تحصیل ظفر وال ضلع نارووال، انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کی باڈی کی تشکیل


تحصیل ظفر وال ضلع نارووال، انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کی باڈی کی تشکیل

تحصیل ظفر وال ضلع نارووال، انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کی باڈی کی تشکیل

 

حاجی محمد اشفاق احمد جنجوعہ (آر۔ ایم )

                مورخہ 10 جولائی 2012 بروز منگل بعد از نماز ظہر جامع مسجد ومدرسہ خلفائے راشدین نارووال میں تحصیل نارووال کے علماءکرام، سیاسی ، سماجی ، روحانی اور مذہبی شخصیات کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا، جس میں اجلاس کا مقصد حاجی جمیل احمد عابد صاحب نے بیان کرتے ہوئے فرمایا کہ گزشتہ ماہ جون میں حضرت مولانا افتخار اللہ شاکر صاحب نائب امیر انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ پنجاب اورحضرت مولنا مفتی محمد عثمان طاہر صاحب نبیرہ حضرت مولانا عبدالحق صاحب رحمة اللہ علیہ (فاضل دیوبند) تشریف لائے تھے اور انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ تحصیل نارووال کی باڈی تشکیل دینے کے متعلق گفتگو فرمارہے تھے جس کے پیش نظر ہم کو ایک ماہ کا وقت درکار تھا۔ ہم نے علماءکرام کو تمام سیاسی، سماجی، روحانی اور مذہبی شخصیات کو اجلاس پر مدعوکیا اور اس دعوت کے متعلق فردًا فردًا ہر ایک آدمی کو آگاہ کر دیا تھا، اور آج ہمارے یہاں پر بیٹھنے کا مقصد حضور اکرم کی ختم نبوت کا دفاع کرنے والی جماعت کا خادم اور رکن بننا ہے تا کہ روز قیامت میں شافع محشر کی شفاعت کا مستحق بن سکیں اور منکرین ختم نبوت کا تعاقب کرسکیں، انٹرنیشنل ختم نبوت پنجاب کی قیادت ہمارے درمیان موجود ہے۔

 

بعد ازاں حضرت مولنا مفتی عبدالرشید عثمانی صاحب امیر انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ ضلع نارووال نے انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کا تفصیلی تعارف کروایا اور جماعت کے مشن اور کاز کے حوالہ سے گفتگو کرتے ہوئے حضرت مولانا منظور احمد چنیوٹی صاحب کو خراج تحسین پیش کیا، بعد ازاں حضرت مولانا افتخار اللہ شاکر صاحب نائب امیر انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ پنجاب نے ختم نبوت کے حوالہ سے ایک بصیرت افروز، روحانی ، اصلاحی اور تربیتی بیان کیا، اور باڈی کی تشکیل کے حوالہ سے مکمل راہنمائی فرمائی اور فرمایا کہ حضرت مولانا منظور احمد چنیوٹی صاحبؒ کی بے دریغ قربانیوں اور کاوشوں کو کوئی سمجھدار آدمی فراموش نہیں کرسکتا ، وہ مرد آہن ختم نبوت کا پیغام دنیا کے کونے کونے میں پہنچاتا رہا، مخلوق خدا کی راہنمائی کرتا رہا، قادیانیت اور اس کی ذریت خبیثہ کو للکارتا اور چیلنج کرتا رہا، وہ باطل کے حوصلہ کو لمحوں میں توڑ دیتا، وہ قادیانی مبلغوں کو ناکوں چنے چبواتا، وہ باطل کے ایوانوں میں ننگی تلوار تھا، وہ بے دریغ قادیانیت کو دعوت مباہلہ دیتا، وہ حقیقی سفیر ختم نبوت تھا۔

 

ماں ایسے بچے صدیوں میں جنم دیتی ہےں جو بڑے ہوکر چنیوٹی کا روپ حقیقی معنی میں دھارتے ہےں۔ محض اللہ کے فضل کرم سے وہ مرد آہن ہر میدان میں قادیانی اور اس کی باطل جماعت کو شکست دیتا اور کامیابی و کامرانی کا سہرا باندھا میدان فتح میں مسلمانوں کو خوشخبری سناتا تھا، ہمیں ایسے لوگوں پر فخر کرنا چاہےے یہ ہمارے اور امت مسلمہ کے محسن تھے، بعد ازاں فرمایا کہ: ہمارے ضلع نارووال، تحصیل ظفروال، تحصیل شکر گڑھ میں انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کی باڈیاں تشکیل دی جاچکی ہےں اور تحصیل نارووال میں تشکیل باڈی کی ضرورت کے پیش نظر ہم حاضر ہوئے ہےں۔

 

                شرکاءاجلاس نے مولانا مدظلہ کی بات کو سراہتے ہوئے تحصیل نارووال میں باڈی کی تشکیل پر اظہار رائے کرتے ہوئے اتفاق کیا، اور باڈی کا چناﺅ ہوا۔ جس میں مندرجہ ذیل افراد متفقہ طور پر ان عہدوں پر فائز کردئےے گئے۔


باڈی تحصیل نارووال انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ ضلع نارووال


(i) سرپرست                        مولانا عمران علی صاحب

(ii) نائب سرپرست                  قاری بشیر احمد صاحب

(iii) امیر                          حاجی جمیل احمد عابد صاحب

(iv) نائب امیر اول                  مولانا عبداللہ عابد صاحب

(v) نائب امیر دوم                   قاری عمران اللہ فانی صاحب

(vi) نائب امیر سوم                 حافظ محمد طاہر صاحب

(viii) جنرل سیکرٹری              ڈاکٹر احمد حسین صاحب

(ix) جوائنٹ سیکرٹری              محمد منشاءبھٹی صاحب

 (x) خازن                        مولانا ناصر جمیل صاحب

(xi) سیکرٹری نشرو اشاعت و رابطہ سیکرٹری                  اقبال ساگر صاحب

 


اجلاس کے اختتام پر حضرت مولانا افتخار اللہ شاکر صاحب نے دعا کروائی۔






 

Live streaming video by Ustream
 

کتب

ملٹی میڈیا

 
  • audio
  • videos
  • gallery
  • library

فیچرڈ ویڈیو

  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video
  • featured video